مسلمان سائنس و ٹیکنالاجی کے میدان میں پیچھے کیوں ؟


آج ہم لوگوں پر یہ بات روز روشن کی طرح عیاں ہے کہ مسلمان علم اور عمل کے میدان میں دنیا کی دوسری قوموں سے بہت پیچھے ہیں .. 58 مسلم ممالک میں کل ملا کر 500 یونیورسٹیزبھی نہیں ہیں .. جب کہ صرف انڈیا میں 8407.. امریکہ میں 5758 اور باقی مہذب ممالک میں بھی ہزاروں کی تعداد سے ہیں .. انتہائی افسوس کا مقام ہے کہ پچھلے 300 .. 400 سالوں میں کوئی ایک مسلمان ہیرو نہیں گزرا جس نے سائنس اور ٹکنالاجی میں کوئی کمال کیا ہو .. جس نے انسانیت کے لئے کوئی کارنامہ انجام دیا ہو ..

مانا کہ پاستان کے پاس وسائل کی کمی ہے .. جو وسائل ہیں ان کو صحیح سے استعمال نہیں کیا گیا .. ہمارے آئن انسٹائن سڑکوں پر بھیک مانگ رہے ہیں .. جنہیں بل گیٹس بننا تھا وہ ڈاکو بن رہے ہیں ..جنہیں ستاروں پر کمند ڈالنی تھی وہ بجلی کے تاروں پر کنڈے ڈال رہے ہیں ..جنہیں پڑھ لکھ کر خلا کی گرد صاف کرنی تھی وہ وائیپر سے سگنل پر کھڑی گاڑیوں کے شیشوں کی گرد صاف کر رہے ہیں … جنہیں اسلام پھیلانا تھا وہ دہشت پھیلا رہے ہیں ..جنہیں کائنات کو تسخیر کرنے کا درس دینا تھا وہ زندگی کو حقیر کرنے کا درس دے رہے ہیں .. جنہیں اپنے عمل اپنے علم اپنے کردار سے پوری دنیا پر غلبہ کرنا تھا وہ آج اپنے علم اپنےعمل .. اپنے کردار کی ہی وجہ سے پوری دنیا کے غلام بنے ہوئے ہیں ..
لیکن ان مسلم ممالک نے بھی تو کچھ نہیں کیا جہاں بے پناہ وسائل ہیں جن کی زمین کے اوپر سونے کے پہاڑ اور زمین کے نیچے دنیا کی سب سے مہنگی معدنیات ہیں .. کیا اسلام دنیاوی علم حاصل کرنے کا درس نہیں دیتا ؟؟
قراں کا پہلا پارہ چھوڑ کر .. ہر پارے کے اندر لکھا ہے .. ” تم غور کیوں نہیں کرتے "..” تم فکر کیوں نہین کرتے ..” تم تدبر کیوں نہیں کرتے .. قرآن میں کئی مقامات پر .. تسخیر کائنات کا حکم ہے .. تو یہ کائنات مسلمان کیوں نہیں تسخیر کر رہے ؟

ایک مشہور حدیث علم کے حوالے سے ہمیں بتائی جاتی ہے کہ .. "علم حاصل کرو چاہے اس کے لئے تمہیں چین ہی کیوں نہ جانا پڑے ".. ہمارے ایک سر تھے جو عیسائی تھے انہوں نے ہمیں یہ بتایا تھا کہ حضور پاک صلی اللہ علیہ وسلم کے دور میں چین تو تھا نہیں تو انہوں نے چین نہیں بلکہ طور سینا کہا تھا .. جو کہ سینا سے چین ہوگیا بعد میں .. لیکن بہرحال یہ کنفرم بات نہیں ہے ..
ایک اور مشہور حدیث .. ” مہد سے لے کر لہد تک علم حاصل کرو .. کیا گود سے لے کر قبر تک صرف دینوی علم حاصل کرنے کا کہا گیا ہوگا ؟ پھر مسلمان دنیاوی علوم میں اتنے پیچھے کیوں ہیں ؟ مجھے ان سوالوں کے جواب نہیں ملتے .. کیا آپ کو ملتے ہیں ؟

ان facts and figures سے اچھی طرح اندازہ ہوتا ہے کہ جدید دنیا کی عظیم ایجادات جن کو ہم اللہ کی نعمت سمجھ کر استعمال کرتے ہیں ان کو بنانے میں اللہ کے بندے کہلوانے والوں کا کتنا ہاتھ ہے ۔۔

Advertisements
This entry was posted in ہمارا المیہ. Bookmark the permalink.

3 Responses to مسلمان سائنس و ٹیکنالاجی کے میدان میں پیچھے کیوں ؟

  1. Saad نے کہا:

    اس کی ایک وجہ ہمارے حکمران بھی ہیں۔ وہ نہیں چاہتے کہ لوگ پڑھ لکھ کر باشعور ہو جائیں اور ان کی عیاشیوں کو چیلنج کر سکیں۔ باقی جو پڑھ لکھ جاتے ہیں ان کے ساتھ ایسا سلوک کیا جاتا ہے کہ باقیوں کیلیے عبرت کا نمونہ بن جائے۔

  2. fikrepakistan نے کہا:

    سعد میں نے صرف پاکستان کی نہیں پوری امت مسلمہ کی بات کی ہے ۔۔

    ہمارے ملک میں تو خیر سب سے بڑی وجہ ہی حکمران ہیں ۔۔ تعلیم کا ریشو جان کر کم رکھا گیا ہے اپنے مفادات کو حاصل کرنے کے لئے ۔۔ لیکن اب وقت ہے کہ قوم ان حقیقتوں سے واقف ہو ۔۔ اپنی اصلاح سے پہلے اپنی کمزوریاں جاننا بہت ضروری ہیں ۔۔۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s