کیوں ؟


کیوں ہمارے ملک میں بجلی نہیں بنائی جا رہی ؟ جو شہر کچھ ڈیولپڈ ہیں ان میں ہی مشکل سے 15 .. 16 گھنٹے بجلی ہوتی ہے .. جو اوسط درجے کے شہر ہیں وہاں تو 10 سے 12 گھنٹے مشکل اور جو دیہات ہے وہاں تو تقریباً ندارد .. اتنا کوئلہ .. اتنا پانی.. ریت یہ سب ہونے کے باوجود کیوں نہیں بنائی جا رہی بجلی ؟ کیوں ہم اپنے وسائل استعمال نہیں کر رہے ؟ چلیں نہیں بنائی جا رہی جو بجلی ہے اس کی چوری پر ہی اگر قابو پا لیا جائے تو اس کو ہی اچھے طریقے سے استعمال کیا جا سکتا ہے .. کیوں نہیں روکا جاتا چوری کو ؟
کیوں ہمارے ملک میں سینکڑوں اسکولز بند ہیں اور جن کا اسٹاف تنخواہیں بھی لیتا ہے پر اسکول نہیں جاتا پڑھانے ؟ کیوں ہماری 50% سے بھی زیادہ عوام زندگی کی بنیادی سہولتوں سے محروم ہے ؟ کیوں آج بھی دیہات میں لوگ زمانہ جاہلیت والی زندگی گزار رہے ہیں ؟
کیوں ہمارے نوجوان تعلیم حاصل کر کے بہتر وسائل کے لئے ملک سے باہر جانے پر مجبور ہیں ؟ اور جن کو تعلیم حاصل کرنے کے وسائل نہیں وہ مدرسوں میں پڑھنے پر مجبور جہاں انہیں غلط اسلام کی تشریح سکھا کر مسلکوں میں بانٹا جاتا ہے یا خود کش حملے کرنے پر لگا دیا جاتا ہے .. ہم جن مدرسوں میں بڑے شوق سے ثواب کی غرض سے خیرات دیتے ہیں دیگیں پکوا کر بھیجتے ہیں .. کیا ہم جانتے ہیں کہ کتنے لوگوں کو مفت کی کھلا کر ہم اپاہج بنا رہے ہیں ؟ جن کے بچے لائوڈ اسپیکر اٹھا کر گلیوں گلیوں .. بسوں اور ویگنوں میں فنڈ کے نام پر بھیک مانگ رہے ہوتے ہیں .. کیا سکھا رہے ہیں ہم انہیں اسلام یا بھیک مانگنا ؟
نوجوان کسی بھی ملک کا سرمایہ ہوتے ہیں اور جتنا ریشو نوجوانوں کا ہمارے ملک میں ہے آئیڈیل ریشو کہلاتا ہے .. کس چرح استعمال کر رہے ہیں ہم اس سرمائے کا ؟

کیوں ہمارے پورے ملک کے بچے ایک ہی نصاب نہیں پڑھ رہے ؟ کیوں گورنمینٹ اسکولز میں تعلیم کا معیار گرا ہوا ہے ؟ کیوں پرایئویٹ اسکولز اتنی بھاری فیس لے کر بھی بچوں کی صحیح تعلیم و تربیت نہیں کر رہے ؟ میں خود ایک تعلیمی ادارے سے 5 سال منسلک رہی ہوں … جہاں 1800 ماہانہ فی دینے والا بچے .. میٹرک میں آ کر بھی نہ صحیح اردو لکھ پاتے نہ انگلش .. جنرل نالج دینا تو دور کی بات کورس کی کتابیں بھی ٹھیک سے نہیں پڑھائی جاتیں .. صرف چند اسکولز جو بہتر تعلیم دے رہے ہیں اس کی فی 5000 ماہانہ یا اس سے متوسط طبقے کی پہنچ سے کوسوں دور ..
امریکہ مین صدر اوبامہ کا بچہ اور عام آدمی کا بچہ ایک ہی نصاب پڑھ رہے ہوتے ہیں ..( پھر آپ کہیں گے کہ میں ان سے اپنا موازنہ کر رہی ہوں .. جب تک موازنہ نہیں کیا جائے گا ہمیں کیسے پتا چلے گا کہ ہمارے اندر کیا کمزوریاں ہیں ؟ )

کیون اتنا صوبائی تعصب پایا جاتا ہے یہاں ؟ کیوں ہماری قوم کو منظم کرنے کے بجائے منتشر کیا جاتا ہے ؟

کیوں ہماری عوام رشوت لینے اور دینے پر مجبور ہے .. ؟ کیوں بجلی چوری کرنے پر مجبور ہے ؟ ہمارا ملک ترقی کی راہ پر گامزن ہے یا تباہی کی ؟ یہ اور اس طرح کے ہزاروں سوال کس سے طلب کئے جائیں ان کے جواب .. کون ہے ذمہ دار اس کا ..؟

Advertisements
This entry was posted in افسوس. Bookmark the permalink.

6 Responses to کیوں ؟

  1. nonajani نے کہا:

    ھم لوگ خود اس کے ذمہ دار ھیں۔کیوں کے ھم لوگ اپنی ذمہ داریاں خود پوری نہیں کرتےصرف دوسروں کو ذمہ دار ٹھراتے ھیں۔جب تک ھم دوسروں کو الزام دینے کی بجاۓ خود کوٹھیک نہیں کر تے۔یہ سب کچھ اسی طر ح چلتا رھے گا۔ ھر‌فردخود‎سےشروع کرے تو بات بنے گی

  2. fikrepakistan نے کہا:

    اگر ہم خود ذمہ دار ہیں تو کیا ہمیں اس بات کا احساس بھی ہے ہم ذمہ دار ہیں کہ نہیں ۔۔ ہر فرد خود سے تب شروع کرے گا جب اس احساس ذمہ داری سے دوچار ہوگا …

  3. جعفر نے کہا:

    ذمہ داری کا تعین کرنا تو بہت آسان ہے
    دوسروں پر ڈال دیں

  4. fikrepakistan نے کہا:

    بلاگ پر خوش آمدید جعفراور تبصرے کا شکریہ ۔۔

    اب تک تو یہی کرتے آئے ہیں آگے بھی یہی کرتے رہیں گے تو بہتری کی کرن کبھی روشن نہیں ہوگی..

  5. mohibalvi نے کہا:

    فکر پاکستان ،
    اس بلاگ پر آ کر واقعی لگتا ہے کہ کوئی دن رات پاکستان کی فکر میں لگا ہوا ہے

    ایسے لوگ تعداد میں بڑھ جائیں تو شاید ملک کا بھلا ہو جائے ویسے منہ کا ذائقہ بدلنے کو ایک آدھ کیوں ، کیا سے ہٹ کر پوسٹ ہو جائے تو کوئی حرج ہے کیا ؟

  6. fikrepakistan نے کہا:

    محب علوی : پاکستان کی فکر میں تو آپ کو ہر کوئی ملے گا ۔۔ صرف زبانی جمع خرچ تک ۔۔ 🙂

    ہٹ کر بھی پوسٹس ہونے میں حرج نہیں پر نام ایسا رکھا ہے بلاگ کا کہ کچھ اور لکھوں تو لگتا ہے فٹ نہیں بیٹھے گا ۔۔ 🙂

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s