قرآن کا حکم اور ھم


کچھ دنوں پہلے ایک بہت ہی قابل احترام عالم دین سے ملاقات ھوی انکی دل سے عزت کرنے کی وجھ انکئ غیر جانبدار شخھصیت ھے، ایک سوال عرصھ دراز سے بےچین کیے ھوے تھا سوچا موقع کا فائدہ اٹھایا جاے اور ان کے علم سے فیض حاصل کیا جاے، گو کے یھ سوال میں متعدد مولوئ حضرات سے کر چکا ہوں مگر افسوس کھ تسلئ بخش جواب نھ ملنے کئ وجھ سے میرا سوال تشنہ ہئ رہا، میں نے انکئ خدمت میں عرض کیا حضرت قرآن پاک میں متعدد بار اللہ تعالئ فرماتے ہیں، تم غور کیوں نہیں کرتے، تم تدبر کیوں نہیں کرتے، تم تفکر کیوں نہیں کرتے، ھم نے کائنات میں ہر چیز رکھی ھے ڈھونڈو تلاش کرو، غرض یھ کے قرآن میں تسخیر کائنات کا حکم سینکڑوں بار آیا ھے تو قرآن کے اس حکم کی تشہیر و تبلیغ کیوں نہیں کی جاتی،میں نے آج تک کسئ مولوئ کسئ عالم کے خطبے میں قرآن کے اس حکم کئ تبلیغ نہیں سنئ جب کہ میں سمجھتا ھوں کہ مسلم دنیا آج جن مسائل کا شکار ھے جس ذلت اور پستئ کا سامنا ھے دنیا کے ہر کونے میں صرف مسلمان ہئ زلیل و خوار ہیں تو اسکی وجھ علم کی کمی سائنس اور ٹیکنالوجی سے دوری ھے، آج اگر افغانستان عراق لبنان فلسطین یا ہر وہ مسلم ریاست جہاں مسلمان ساری دنیا سے پٹ رہے ھیں اگر ان تمام ممالک کے پاس ایٹمی ٹیکنالوجی ہوتی تو کیا کسی کی ہمت ہوتی ان تمام ممالک پر اس طرح حملے کرنے کی اس طرح قبضے کرنے کی، پاکستان انڈیا کے مقابلے میں بہت چھوٹا ملک ھے لاکھ نفرت لاکھ دشمنی کے باوجود انڈیا اب پاکستان پر حملے کی ہمت نہیں کرتا تو اسکی واحد وجھ ہمارا ایٹمی قوت ہونا ھے، میں نے ان سے عرض کیا ھم ثواب اورینٹڈ لوگ ہیں اپنے باپ کی بات نہیں سنتے مگر جس بھی فقھہ کو مانتے ہیں اس فقھ کے عالم یا مولوی کی بات ضرور سنتے اور مانتے ہیں تو مولی حضرات ہمیں جہاں قبر کے عذاب سے ڈراتے ہیں آخرت کی تیاری کا بتاتے ہیں یقین یہ سب اسلام کے احکامات ہیں مگر تسخیر کائنات بھی تو اسلام کا حکم ھے غربت کے دلدل سے نکلنے کے لیے کوشش کرنا بھی تو اسلام کا ہی حکم ھے اگر مولی حضرات آج قرآن کے اس حکم کی تامیل کے لیے قوم کو درس دیں مسلمان قوم بھی غربت کے اس دلدل سے نکل سکتی ھے وہ غربت جس سے نبی پاک صلی علیھ وسلم نے بھی پناھ مانگی ھے، میرے یھ سارے سوالات وہ بہت دلچسپی سے سنتے رھے اور پھر وہ کہنے لگے کے تمہاری ایک ایک بات سے میں متفق ہوں تم تو باہر بیٹھ کر یھ بات کررہے ھو میرا تو اپنے حلقے میں جھگڑا ھی اس ہی بات پر رہتا تھا وہ کہنے لگے کے یھ مولی حضرات کہاں سے بتائیں گے انہیں خود کچھ نہیں معلوم بدقسمتی سے ہمارے مدرسوں میں آج تک آٹھ سو سال پرآنا درس نظامی پڑھایا جاتا ھے انہیں آٹھ سو سال پرانا درس لظامی رٹایا جاتا ھے انہیں کیا پتا سائنس کیا ہوتی ھے ٹیکنالوجی کسے کہتے ہیں انہیں کیا پتا دنیا کہاں پہنچ چکی ھے ان بےچاروں کی مجبوری ھے انہیں دور حاضر کے تقاضوں کا ادراک ھی نہیں ھے مدرسے سے فارغ ہونے کے بعد انکی پہلی فوقیت یھ ھوتی ھے کے کسی طرح کسی مسجد کی امامت مل جاے جہاں سے انہیں آٹھ دس ہزار روپے ملنا شروع ہوجائیں اور مہینے میں پانچ چھے نکاح پڑھانے کے لیے مل جائٰیں اور انکی روزی روٹئ چل سکے، یھ دوسروں کو کیا بتائیں گے انہیں خود کچھ نہیں پتھ، تسخیر کائنات کا حکم قرآن میں سینکروں بار ھے مگر آج اس حکم پر عمل کفار کررہے ھیں اور عزت اور کامیابی انکے قدم چوم رھی ھے، ھم کوٹن کا پورا جہاز بھر کے امریکھ بھیج کر خوش ھوتے ھیں جب کے وہ ایف سولھ کا ایک معمولی پرزا ھمیں دے کر سارا حساب برابر کرلیتا ھے، یھ طے ھے جب تک مسلمان سائنس اور ٹیکنالوجی کی طرف نہیں آئیں گے ایسے ھی پٹتے رہینگے اب جنگ میدانوں سے نکل کر کمپیوٹر کی اسکرین پر آچکی ھے مگر ان کم علم لوگوں کی سمجھ میں یھ معمولی سی بات نہیں آتی یھ صرف آخرت کو فتح کرنے کا درس دیتے ھیں جبکھ قرآن کہتا ھے بےشک تم ھی غالب آو گے اگر تم مومن ھو، تو یھ غالب آنے کی بات دنیا کیلیے ھی ھے آخرت کے لیے نہیں تو مرتے رھو سسکتے رھو وہ تو بچاس ہزار فٹ کی بلندی سے تم پر بم برساتا رھے گا تم کافر کی ھی بنائی ھوئی کلاشنکوف لے کر زمین پر رینگتے رھو بغیر علم حاصل کیے بغیر ٹیکنالوجی حاصل کیے فتح نہیں ملنے والی، انکی ھمجھ میں اتنی معامولی بات نہیں آتی کے جو اس معامولی اور فانی دنیا کا فاتح نہیں بن سکا وہ ھمیشھ قائم رہنے والی لافانی دنیا کا جاتح کیسے ھوسکتا ھے۔

Advertisements
This entry was posted in مذہب. Bookmark the permalink.

5 Responses to قرآن کا حکم اور ھم

  1. محب علوی نے کہا:

    ویسے اگر میں پرانی پوسٹ نہ پڑھتا تو یہی سمجھتا کہ غلطی سے اس پوسٹ میں جنس بدل گئی ہے ورنہ سوچ ہو بہو وہی ہے جو شروع سے اس بلاگ پر چلی آ رہی ہے۔

    دعا ہے کہ یہ فکر پاکستان پاکستان کی فکر کرتی رہے 🙂

  2. fikrepakistan نے کہا:

    اتنے گہرے مشاہدے کی داد دینی پریگی، اس موقع کی مناسبت سے مجھے نظر امروہی صاحب کا ایک شعر یاد آگیا۔ ہر اک شھ میں تیرا ہی چہرا دکھائی دیتا ھے۔ بتا تجھے بھی کیا کوئی مجھ سا دکھائی دیتا ھے۔ یھ کون ھے نظر امروہی کے پردے میں۔ مجھے تو کوئی پس پردا دکھائی دیتا ھے۔

  3. عثمان نے کہا:

    گیلی دھوپ صاحب۔۔۔
    آپ کو تین کام کرنا ہوں گے۔

    ایک فونٹ کی درستگی۔۔۔۔جس کی تفصیلات طلب کرنے پر مہیا ہو جائیں گی۔
    دوسرا تعارف کا ایک صفحہ لگائیں جس میں آپ کے بارے میں دو چار جملے ہوں۔
    تیسرا یہ کہ خود کو بلاگستان میں متحرک کرنا پڑے گا۔

    آپ کا خیر خواہ
    عثمان

  4. فکر پاکستان نے کہا:

    عثمان رہنمائی کا بہت بہت شکریہ میں اس بلاگنگ کی دنیا میں نیا ہوں اسلئے مجھے آپکی رہنمائی کی ہر قدم پر ضرورت رہیگی مہربانی فرما کر ان تینوں معاملوں میں میری رہنمائی فرمائیں.

  5. گیلی دھوپ نے کہا:

    عثمان رہنمائی کا بہت بہت شکریہ میں اس بلاگنگ کی دنیا میں نیا ہوں اسلئے مجھے آپکی رہنمائی کی ہر قدم پر ضرورت رہیگی مہربانی فرما کر ان تینوں معاملوں میں میری رہنمائی فرمائیں.

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s