یہ عنیقہ کی نہیں شعور کی موت ہوئی ہے۔


انا للہ وانا الیہ راجعون، جس وقت سے یہ منحوس خبر سنی ہے دل ڈوب سا گیا ہے، نہ جانے یہ کیسا رشتہ ہے کہ آنسو تھمنے کا نام ہی نہیں لے رہے، دانستہ دھیان بٹانے کی بارہا کوشش کر رہا ہوں مگر پھر دھیان عنیقہ صاحبہ کی طرف چلا جاتا ہے اور ایسا لگتا ہے کے دل کسی نے مٹھی میں لے کر بری طرح سے بھینچ دیا ہو، مجھے یہ کہنے میں کوئی آر نہیں کہ اردو بلاگستان یتیم ہوگیا، میرا المیہ تو یہ بھی ہے کہ میں باقی دوستوں کی طرح یہ بھی نہیں کہہ سکتا کہ میرا ان سے نظریاتی اختلاف تھا، مجھہ میں اتنی ہمت نہیں کہ میں عنیقہ صاحبہ کے بغیر بلاگ پر آسکوں وہ میری بہن تھیں میری ٹیچر تھیں میری رہنما تھیں ایک ساتھہ اتنے سارے رشتے ٹوٹنے کا دکھہ سہہ نہیں پا رہا، زبان دل کا ساتھہ نہیں دے رہی اور انگلیاں زبان کا ساتھہ نہیں دے پا رہیں، میں آج بلاگستان کے تمام ہم خیال اور ناقد دوستوں سے تہہ دل سے معافی کا طلبگار ہوں میری جس کسی بات سے بھی جس کسی دوست کو بھی تکلیف پہنچی ہو میں ہاتھہ جوڑ کر تہہ دل سے معافی کا طلبگار ہوں، ہم اپنی زات میں اپنی انا کے قیدی ہیں جانتے ہیں کہ فلاں جگہ ہم غلط ہیں لیکن انا مجروح نہ ہو اسلئیے سامنے والے کی صحیح بات کی بھی ڈھٹائی کے ساتھہ نفی کرتے ہیں، عنیقہ صاحبہ کے جانے کے بعد آج پتہ چلا کے یہ ہے انسان کی اصل حقیقت، عنیقہ صاحبہ کی وفات کے غم میں آج بلاگستان کی ہر آنکھہ اشکبار ہے یہ ہے وہ محبت جو کسی کی بھی زندگی کا حاصل کہی جاسکتی ہے، جو محبت جو احترام جو انسیت میں عنیقہ صاحبہ کے جانے کے بعد انکے لئیے محسوس کر رہا ہوں وہ شاید انکی زندگی میں محسوس نہیں ہوئی، اللہ ہمیں لوگوں کی زندگی میں ہی انکی قدر کرنے کی توفیق عطاء فرمائیں، یہ میری آخری تحریر ہے آج کے بعد میں کبھی بھی بلاگ نہیں لکھہ پاوں گا، ڈاکڑ عنیقہ ناز صاحبہ کے ساتھہ میرے اندر کا لکھاری بھی وفات پاگیا، ایک بار پھر تمام دوستوں سے معافی کا طلبگار ہوں، اللہ تعالی کی بارگاہ میں دعا ہے کے اللہ ہم تمام بلاگرز اور انکے اہل خانہ کے آنسووں کی لاج رکھتے ہوئے انہیں جنت الفردوس میں اعلیٰ سے اعلیٰ مقام عطاء فرمائیں، اور انکی چہیتی بیٹی اور انکے اہل خانہ کو صبر جمیل عطاء فرمائیں اور اس صبر جمیل پر انہیں اجر عظیم عطاء فرمائیں، آمین۔ تمام بلاگر دوستوں کے لئیے دعا گو رہوں گا اور ہوسکے تو آپ سب بھی اپنے اس گناہگار دوست کو اپنی قیمتی دعاوں میں یاد رکھئیے گا، میں خاص طور پہ اپنے تمام ناقد دوستوں ڈاکڑجواد صاحب، وقار اعظم، یاسر بھائی، میرا چھوٹا بھائی اور میرا ہم نام کاشف نصیر، اور بہت ہی پیارا انسان عمران اقبال، اور میرے محترم بزرگ اجمل بھوپالی صاحب، حلیمہ عثمان، اور اس بلاگ پر ابتداء میں میری رہنمائی کرنے والے عثمان بھائی، خاور بھائی، ارتقاء حیات، حجاب، ڈفر، شازل، جاہل سنکی، احمد عرفان شفقت صاحب، ایم بلال، تانیہ جی، عبداللہ بھائی، شفیق ترین بھائی جاوید گوندل، تحریم، فکرستان، میرا پاکستان، وسیم بیگ، سعدیہ سحر، محمد سلیم، بلاامتیاز، عادل بھیا، پروفیسر محمد عقیل ، نور محمد،  مکی صاحب، اور اس بلاگ کی اصل مالکہ سے ایک بار پھر معزرت کا طلبگار ہوں، کہا سنا معاف کیجئیے گا، فی امان اللہ۔

Advertisements
This entry was posted in افسوس. Bookmark the permalink.

13 Responses to یہ عنیقہ کی نہیں شعور کی موت ہوئی ہے۔

  1. مکی نے کہا:

    وہ ایک شخص تو سارے شہر کو ویران کر ہی گیا.. اور اب آپ بھی؟

    اب فکرِ پاکستان کون کرے گا؟

    یہ بھی ایک بلاگر کی موت ہے!!

  2. مکی نے کہا:

    وہ ایک شخص تو سارے شہر کو ویران کر ہی گیا.. اور اب آپ بھی؟

    اب فکرِ پاکستان کون کرے گا؟

    یہ بھی ایک بلاگر کی موت ہے!!

    • fikrepakistan نے کہا:

      اسلام و علیکم مکی بھائی، عید قرباں مبارک ہو، عنیقہ جی کے بعد دل نہیں مان رہا، میں بلاگ پر آوں اور عنیقہ جی کے فیض سے فیضیاب نہ ہوں تو بلاگ پر آنا بے مقصد سا لگتا ہے، پھر بھی میں کوشش کروں گا کے آپ سب لوگوں کی رائے کا احترام کر سکوں۔

  3. عمران اقبال نے کہا:

    کاشف بھائی۔۔۔ (میں پہلی دفعہ آپ کو نام لے کر مخاطب کر رہا ہوں)، جذبات کی انتہائی شدت کے ساتھ یہ لکھ رہا ہوں۔۔۔ اور آپ جانتے ہیں کہ جذبات کی آواز دل سے نکلتی ہے۔۔۔ آپ بلاگنگ نہیں چھوڑیں گے۔۔۔ یہ میری درخواست ہے۔۔۔ عنیقہ کی وفات نے نے بلاگستان میں جو خلع پیدا کر دیا ہے، اردو بلاگنگ مزید کسی اچھے بلاگر کو کھونے کا متحمل نہیں۔۔۔

    آپ سے بہت سے لوگ اختلاف رکھتے ہیں، پیٹھ پیچھے برایاں بھی کرتے ہوں گے۔۔۔ لیکن آپ کی سوچ اور فکر، جیسی بھی ہے، قاری تک پہنچنی بہت ضروری ہے۔۔۔ اللہ تبارک تعالٰی نے آپ کو لکھنے کی صلاحیت کا جو تحفہ بخشا ہے، اسے مت ضائع کریں اور لکھتے رہیں۔۔۔۔ یہ میری درخواست ہے۔۔۔ اردو بلاگستان مزید کسی بلاگر کو کھونے کا متحمل نہیں ہو سکتا۔۔۔

    میں جانتا ہوں کہ آپ میری کتنی قدر کرتے ہیں۔۔۔ ہمیشہ آپ نے میری پذیرائی کی ہے۔۔۔ اگر آج میں لکھنے کے قابل ہوں تو آپ جیسے دوستوں کی بدولت۔۔۔۔ خدارا مت جائیں۔۔۔ مت جائیں۔۔۔

    میں بہت جذباتی آدمی ہوں۔۔۔ عنیقہ سے میرے اختلافات رہے لیکن اللہ جانتا ہے کہ کل سے ان کو یاد کرتے کرتے، کتنی بار میری آنکھیں بھیگی ہیں۔۔۔ یہ ان کا اچھا پن ہی تھا کہ آج ان کے لیے سب سے زیادہ جو رو رہے ہیں وہ ان کی زندگی میں ان کے سب سے بڑے ناقد تھے، بشمول میرے۔۔۔

    اردو بلاگستان عنیقہ کے بعد اپنی فکر کو کھونے کا سانحہ مزید برداشت نہیں کر سکتا۔۔۔ خدارا مت جائیں۔۔۔ مت جائیں۔۔۔

    • fikrepakistan نے کہا:

      عمران اقبال بھائی عید قرباں بہت بہت مبارک ہو، آپ سے تو بہت زیادہ ادب احترام اور محبت کا رشتہ ہے میں کہیں بھی رہوں انشاءاللہ آپ سے جڑا رہوں گا، میں نے اپنی فیس بک کی آئی ڈی بھی آپکے بلاگ پر دی ہے امید ہے جلد آپ سے فیس بک پر ملاقات ہوگی۔

  4. آج یوم حج ہے اللہ سے دعا ہے آج اس با برکت گھڑی کے موقعہ پر ا س جب خطبۂ حج دیا جا رہا ہے اور میرے دل سے عنیقہ جی کے لئے دل سے مغفرت کی دعائیں نکل رہی ہیں اللہ ان دعاؤں کو قبولیت کا درجہ عطا فرمائے۔کون ہے جو اس جہاں سے جانے کا سوچ سکتا ہے پر جانا سب نے ہے پرایسے؟
    جتنا لکھا جائے کم ہے تحریر لکھنے کی مزید ہمت نہیں بس دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ ڈاکٹر عنیقہ ناز کو جنت میں اعلیٰ مقام دے اور ان کے پس ماندگان اور خاص کر ان کی بیٹی مشعل کو اللہ صبرجمیل عطا فرمائے ۔ انہیں علم کا ذوق و شوق عطا فرمائے ،اسلامی شریعت کی راہ پر گامزن فرمائے۔ آمین۔

  5. Dr Jawwad Khan نے کہا:

    بھائی کاشف یحییٰ!
    اتنا جذباتی کیوں ہوجاتے ہو؟
    بلاگستان میں کوئی بھی ان باتوں پر رنجیدہ نہیں ہوتا۔ یہ سب کج بحثیاں صرف اور صرف تفریح کے لیے ہوتی ہیں۔ واللہ میرے دل میں آپکے لیے کبھی بھی غصہ یا بغض نہیں رہا ہے۔ میرے الفاط پر مت جایا کریں۔ میں تو بلاگستان میں صرف تفریح اور چھیڑ چھاڑ کے لیے آتا ہوں۔ اصلاح کا کام میرا نہیں ہے اس کام کے لیے بڑا انسان ہونا ضروری ہے۔
    مجھے ہمیشہ اپنے آپ پر غصہ کرنے والوں پر پیار آتا ہے۔ یہ میرا مزاج ہے۔ میں چھیڑ کر اور گالیاں کھا کر خوش ہونے والوں میں سے ہوں۔
    آپ بھی چھوڑ کر چلے گئے تو سیارہ ویران ہو جائے گا۔ ہم خیال مجھے بہت عزیز ہیں لیکن کیا کروں میں جلد بور ہوجاتا ہوں۔ برائے مہربانی اپنے فیصلے پر نظر ثانی کیجیے۔ کیونکہ ہماری ذات سیارہ پر مجازی ہے۔ ہم میں سے کوئی ایک دوسرے کو نفع یا نقصان نہیں پہنچا سکتا۔ اس مجازی دنیا میں اس طرح رنجیدہ اور کبیدہ خاطر ہونا کسی بھی طور دانشمندی نہیں۔ معافی تلافی کا تو کوئی سوال ہی نہیں ہے۔
    امید ہے آپ سیارہ پر موجود رہیں گے اور لکھتے رہیں گے۔ خوش رہیے۔

    • fikrepakistan نے کہا:

      اسلام و علیکم جواد بھائی، آپکو اور آپکے اہل خانہ کو بقرا عید کی خوشیاں بہت بہت مبارک ہوں، آپکی حوصلہ افزائی کا بہت بہت شکریہ کوشش کروں گا آپکی بات پر عمل کر سکوں۔

  6. نظریاتی اختلافات اپنی جگہ۔
    میری دل میں کبھی کسی کیلئے بغض نہیں تھا۔
    نا ہی عنیقہ جی کیلئے اور نا ہی آپ کیلئے۔
    چھیڑ چھاڑ کی تو ایک ہی عبد اللہ نامی شخص سے۔
    وہ بھی اس کی انتہائی بد اخلاقی کی وجہ سے۔
    اور میرے خیال میں ، میں نے کبھی بھی آپ کو تنگ نہیں کیا۔
    بحرحال جذباتیت اگر اپنی حد سے گذر جائے تو اعتدال کو مار دیتی ہے۔
    آپ اگر اپنے اعتدال کو مارنا چاھتے ہیں تو آپ کو اس کی آزادی حاصل ہے۔
    عنیقہ جی کا دکھ انہیں زیادہ ہے جو ان کی مخالفت کرتے رہے۔
    اور اگر ہم کہیں کہ ہم نے اختلاف سے رجوع کر لیا تو
    یہ منافقت ہوگی۔
    ان سے انسیت یا ان کا ہمیں غور و فکر کرنے پر مجبور کرنے کا احسان ہم ضرور جیتے جی مانتے رہیں گے۔

    • fikrepakistan نے کہا:

      اسلام و علیکم یاسر بھائی، آپکو اور آپکے اہل خانہ کو بقرا عید بہت بہت مبارک ہو، یاسر بھائی آپ سے تو ہمیشہ ہی محبت کا رشتہ رہا ہے، آپکا شمار بھی ان لوگوں میں ہے جن سے میں اس بلاگ پر کچھہ نا کچھہ سیکھا ہی ہے، آپ نے جس جانب توجہ دلائی ہے میں کوشش کروں گا کہ خود کو مائل کرسکوں۔

  7. حجاب نے کہا:

    مجھ سے معافی ؟؟؟؟؟؟؟؟ نہ کبھی کچھ کہا نا سنا ہاں آپکی ہر پوسٹ پہ نظر ضرور ڈال لیا کرتی تھی ، کسی کے جانے سے زندگی کب رکتی ہے ہاں سسک سسک کے ضرور گزرتی ہے سو آپ بھی لکھ لیا کریں کبھی کبھی ۔۔۔

    • fikrepakistan نے کہا:

      حجاب آپ سے واقعی کبھی اتفاق نہیں ہوا میں نے بھی آپکی ہلکی پھلکی تحریریں پڑھیں ہیں لیکن کبھی سوال جواب کی نوبت نہیں آئی، معزرت تو درحقیقت میں نے ان ہی لوگوں سے کی ہے جن سے کبھی نہ کبھی تلخی رہی ہے، آپکا نام ایک اچھے بلاگر کی وجہ سے لیا ہے، اور رہی بات لیکھنے کی تو وہ تو میں اپنے فیس بک پر بھی لکھتا رہتا ہوں باقی دوستوں کی طرح آپ بھی چاہیں تو جوائن کر سکتی ہیں۔
      فلحال تو بلاگ لکھنے کی ہمت نہیں ہے عنیقہ کے بغیر، میں اور عنیقہ ایک ہی اسکول آف تھاٹ کے تھے یہ بات آپ سے بہتر کون جان سکتا ہے۔

  8. offshore corporations نے کہا:

    اب کون ان کے جیسے انوکھے اور بولڈ سوالات کیا کرے گا؟ کون تصویر کا دوسرا رخ بھی سامنے لائے گا؟ ان کے نظریات سے لاکھ اختلافات کے باجود ان جیسی علمی گفتگو اب کون کرے گا؟ حقیقت میں اب فیس بک پر اردو کمیونٹی کے علمی مباحثوں کی رونق مانند پڑ جائے گی۔ فیس بک پر لاگ ان ہونے کے بعد ان کی کمی واضح محسوس ہو رہی ہے۔ اللہ کریم ان کے درجات بلند کرے۔ ان کی فیملی کو یہ سانحہ برداشت کرنے کا حوصلہ نصیب کرے! آمین!

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s