آپ بھی بہت کچھہ کرسکتے ہیں پارٹ ٹو۔


ہمارا ہر وقت کا رونا ہوتا ہے کہ حکومت کام نہیں کر رہی، اگر حکومت اپنی زمہ داریاں نہیں نبھا رہی تو ہم بہ حیثیت شہری اور بہ حیثیت انسان کونسا اپنی زمہ داریاں نبھا رہے ہیں؟۔ ہمارا المیہ یہ ہے کہ ہم ہر وقت کسی مسیحا کا انتظار کرتے رہتے ہیں کہ کہیں سے کوئی مسیحا آئے گا اور پلک جھپکتے ہی ہمارے تمام مسائل حل کردے گا۔ مسیحا نہیں آتے کبھی نہیں آئے کہیں نہیں آتے، ہر شخص کو خود مسیحا بننا پڑتا ہے تب کہیں جا کے فرانس اور برطانیہ کی طرح مہذب قوموں میں شمار کئے جاتے ہیں، فرانس اور برطانیہ آپس میں سو سو سال کی جنگیں لڑ چکے ہیں لیکن آج دنیا میں انکا مقام کیا ہے وہ سب کے سامنے ہے، چرچل نے دوسری جنگ عظیم میں اپنی قوم سے کہا تھا کہ میں تمہیں کوئی سہانے خواب نہیں دکھانا چاہتا میں کچھہ بھی نہیں دے سکتا تمہیں سوائے آنسووں اور درد کے، ان لوگوں نے ایک باپ کی طرح اپنی قوم کی پرورش کی اچھے برے کی تمیز سکھائی انسانیت کا درس دیا انصاف فراہم کیا اور آج وہ دنیا کی عظیم اقوام میں نمبر ون کی پوزیشن پر براجمان ہیں، ہمیں ہی آگے بڑھہ کر کچھہ کرنا ہوگا مسیحا تو نہیں آئے گا جو ایسے خواب دکھاتا ہے وہ جھوٹا ہے۔

ہر کام کے لئیے حکومت کی طرف دیکھنا بند کرتے ہیں، اب زرا اسطرح سوچنا شروع کرتے ہیں۔

اپنے محلے اور گلیوں کو صاف ستھرا رکھھ سکتے ہیں، ہماری سڑکوں پر کچھہ ایسے سپیڈ بریکر بنا دیئے جاتے ہیں جو رات کی تاریکی میں نظر نہیں آتے اکثر ایسے اسپیڈ بریکر پر سے گاڑیاں اچھل جاتی ہیں جو حادثے کا باعث بنتے ہیں، آپ اپنے گھر کے قریب ایسے اسپیڈ بریکر پائیں تو ان پر سفید کلر سے پینٹ کر دیں تاکے گاڑی یا بائک پر آنے والے کو وہ سفیدی اندھیرے میں بھی دور سے نظر آجائے اور وہ کسی ممکنہ حادثے سے بچ پائے۔

اکثر گھنٹوں ٹریفک جام رہتا ہے جسکی وجہ سے لوگ گرمی میں بد حال ہوجاتے ہیں، اگر آپکے گھر کے قریب ایسی صورتِ حال ہوجائے تو آپ پانی سے بھرا جگ گلاس لے کر ٹریفک جام میں پھنسے ہوئے لوگوں کی خدمت میں حاظر ہوجائیں انہیں پانی پلائیں اور ممکن ہو تو کچھہ بسکٹ کے پیکٹس بھی ساتھہ میں رکھہ لیں تاکے جو بچے بھوک سے بلک رہے ہوں انکی بھوک مٹانے کا کچھہ آسرا بن سکے، کیا آپکو لگتا ہے یہ چھوٹی نیکی ہے؟۔

آپ اکیلے ہی اپنی گاڑی میں سفر کر رہے ہوتے ہیں ایسے میں آپ بس اسٹاپ پر کھڑے لوگوں سے دریافت کریں اگر آپکی منزل کے راستے کا ہی کوئی مسافر مل جائے تو اسے ساتھہ بٹھا لیں اسطرح آپکا یہ سفر عین عبادت بن جائے گا۔ تہیہ کر لیں کبھی سگنل نہیں توڑنا کیونکہ سگنل توڑنا قتل کے مترادف جرم ہے، سگنل توڑنے کا مطلب ہے کے آپ کسی کی جان لینے کا سامان پیدا کر رہے ہیں۔

راہ چلتے کانٹے پتھر ہٹانا بھی بہت بڑی نیکی ہے، اپنے علاقے میں چھوٹے چھوٹے پودے لگائیے انکا سایہ کل آپکی ہی نسل کے کام آئے گا، لوگوں سے سلام میں پہل کریں اس سے سامنے والے کو عزت کا احساس ہوتا ہے، ہاتھہ منہ دھوتے وقت یا وضو کرتے وقت نل صرف ضرورت کے مطابق ہی کھولیں تاکے پانی جیسی اللہ کی نعمت کو ضائع ہونے سے بچایا جاسکے، غیر ضروری لائٹس بند رکھیں جس کمرے میں کوئی نہ ہو وہاں کی لائٹس آف رکھیں پنکھے بند رکھیں اسطرح بجلی کی بچت بھی ہوگی اور آپکا بل بھی کم آئے گا۔

پلاسٹک کی تھیلیاں بے انتہا نقصان دہ ہیں اور معاشرے میں کچرا پھیلانے کا سب سے بڑا زریعہ بھی ہیں، آپ کپڑے کے تھیلے سلوئیے اور لوگوں میں مفت تقسیم کریں، تھیلوں پر آنے والے اخراجات آپ تھیلوں پر مختلف کمپنیز کے اشتہار چھپوا کر پورے کرسکتے ہیں، لوگوں میں شعور بیدار کیجئیے کہ دودھہ سبزیاں گوشت وغیرہ اسطرح پلاسٹک کی تھیلیوں میں لے جانا کتنا نقصان دہ ہے صحت کے لئیے۔

آپ نماز پڑھنے جاتے ہیں تو محلے کے بچوں کو بھی نماز کی ترغیب دیں، اسکے لئیے بہترین طریقہ یہ ہے کہ آپ انہیں ٹافی یا بسکٹ کی لالچ دیں کہ جو بچہ نماز پڑھے کا اسے آپ ٹافی یا بسکٹ دیں گے اسطرح آپ دیکھیں گے کہ کتنے ہی بچوں کو نماز کی عادت پڑ جائے گی اور وہ بچہ جب تک نماز پڑھتا رہے گا اسکی نماز کا ثواب آپکو بھی ملتا رہے گا۔

اکثر بسوں میں یا بازاروں میں آپکو بچے یا ضعیف لوگ اخبار یا کھنگھی غیرہ یا اس ہی طرح کی معمولی سی چیزیں بیچتے ہوئے نظر آتے ہیں، انکی عظمت کو خراجِ تحسین پیش کیجئیے کہ وہ بھیک نہیں مانگ رہے چوری نہیں کر رہے بلکے محنت کر کے اپنا اور اپنے گھر والوں کا پیٹ پال رہے ہیں، آپ انکی حوصلہ افزائی کریں، آپکو ضرورت نہیں بھی ہے تو بھی آپ ان سے وہ چیز خرید لیں، پھر وہ چیز آپ کسی ضرورت مند کو عطیہ کر دیں اسطرح آپ نے بہ یک وقت دو لوگوں کی مدد کر دی۔

اپنی زکات کسی ادارے کو دینے کے بجائے آپ اسطرح کے کاموں کی فہرست بنا لیں اور پورا سال اس زکات سے اسطرح لوگوں کی مدد کریں پھر دیکھیں آپکو کیسا سکون میسر آتا ہے، پاکستان میں ہر روز کوئی نہ کوئی بڑا حادثہ پیش آجاتا ہے، اگر اللہ نہ کرے آپکے گھر کے قریب یا آپکے شہر میں ایسا کوئی واقعہ ہوجاتا ہے تو آپ گھر بیٹھہ کر ٹی وی پر نظارا کر کے افسوس کرنے کے بجائے فوراَ اس حادثے کی جگہ پہنچئیے اور ممکنہ حد تک جو خدمت آپ انجام دے سکتے ہیں دیجئیے، یہ ہی اللہ کا انسان سے تقاضہ ہے۔

حقیقت یہ ہے کہ اگر ہم کرنا چاہیں تو بہت سے کام ہیں اور نہ کرنا چاہیں تو حکومت پر تنقید ہی سب سے آسان کام ہے، اب آپکی مرضی ہے کہ مسیحا کا انتظار کریں یا خود مسیحا بن جائیں، چوائس آپکے اپنے ہاتھہ میں ہے۔

یہ سارے وہ کام ہیں جو ہماری مذہبی اور سیاسی جماعتوں کو کرنے چاہئیں، جنہیں ہم اپنی زکات دیتے ہیں، قربانی کی کھالیں دیتے ہیں، چندے دیتے ہیں، مگر وہ لوگ نہیں کریں گے، اس میں قصور وار وہ لوگ نہیں ہیں کیوں کے انکا تو کام ہے یہ دھندہ ہے آپکے مذہبی اور سیاسی جذبات سے کھیلنا اور پیسے بٹورنا یہ فیصلہ تو آپکو کرنا ہے کہ اپنا مال و مطع ان مذہبی اور سیاسی لٹیروں کو دینا ہے یا اپنے ہاتھہ سے مستحقین تک پہنچانا ہے، اگر تحریر کی گئیں تجاویز پر عمل کرلیا جائے تو ہمارا معاشرہ بھی کافی حد تک انسانوں کا معاشرہ بن سکتا ہے اور یہ ہی سب کچھہ اللہ انسان سے چاہتا ہے تو پلیز اللہ کے لئیے نہ صحیح تو اپنی جنت کے حصول کے لئیے ہی اتنا کر گزریں اللہ کی ذات سے امید ہے کہ وہ آپکے یہ عمل ضائع نہیں ہونے دیگا۔

Advertisements
This entry was posted in ہمارا معاشرہ. Bookmark the permalink.

6 Responses to آپ بھی بہت کچھہ کرسکتے ہیں پارٹ ٹو۔

  1. Ajaz نے کہا:

    In Pakistan you can only spread religious poison. Nothing else is as much appreciated. Get real and start saying more prayers and hate more the people of other beliefs. That’s what is Pakistan or a majority of Pakistanis is.

  2. Darvesh Khurasani نے کہا:

    کافی اچھا لکھا ہے۔ اس تحریر کی پہلی قسط اور یہی والی پسند آئی۔ان میں سے چند کام آزما بھی چکا ہوں اور لوگوں کو بھی یہ کام کرتے دیکھ چکا ہوں۔ کافی مثبت نتایج ملے ہیں۔

    ہاں یہ لفٹ کرانے والے معاملے سے تھوڑا ڈرتا ہوں کہ حالات قدرے خراب ہیں۔

    اور بائی د وے شائد اس بالگ کی مالکن سے جان خلاصی نہ ہوسکی کہ کوشش تو کی گئی تھی۔

  3. السلام علیکم ورحمۃ اللہ!

    یہ حصہ بھی بہت اچھا تھا۔ اس میں ایک ایسا نقطہ تھا کہ جس پر میں عمل بھی کر سکتا ہوں اور میرے ذہن میں وہ پہلے نہیں تھا؛ اسپیڈ بریکر پر رنگ کرنا۔ ان شاء اللہ، کل صبح اپنے گاؤں کے اسپیڈ بریکروں کو رنگ کروں گا۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s